Wed. May 18th, 2022

اکثر لوگ جسم میں توند بڑھنے سے پریشان ہوجاتے ہیں اور اسے کم کرنے کے لیے مختلف طریقے اختیار کرتے ہیں لیکن کوئی فائدہ نہیں ہوتا ہم آپ کو ایسے چند طریقے بتارہے ہیں جس پر عمل کرکے آپ توند کو کم کرسکتے ہیں۔

پیٹ میں جمع ہونے والی اضافی چربی کو گھلانے کے آسان طریقے موجود ہیں جس سے آپ کا جسم چند ہفتوں یا مہینوں میں ایک مرتبہ پھر متناسب ہوسکتا ہے۔

ذہنی تناﺅ میں کمی لائیں

ذہنی تناﺅ جسم میں چربی اکھٹا کرنے کا باعث بنتا ہے کیونکہ اس کے نتیجے میں کورٹیسول نامی ہارمون کا اخراج ہوتا ہے جو کھانے کی خواہش کو بڑھاتا ہے۔ لیکن ذہنی تناﺅ کو کیسے کم کریں؟ تو اس کے مختلف طریقے ہوسکتے ہیں تاہم چہل قدمی یا مراقبہ وغیرہ کمی لانے میں مدد دے سکتے ہیں۔

مچھلی سے لطف اندوز ہوں

اومیگا تھری فیٹی ایسڈز صحت کے لیے بہت ضروری ہوتے ہیں اور یہ عمر بڑھنے سے جسم میں آنے والی تنزلی کی روک تھام بھی کرتے ہیں یا بڑھاپا طاری ہونے کا عمل سست کردیتے ہیں۔ مچھلی اس کے حصول کا بہترین ذریعہ ہے اور یہ توند کو جلد گھلانے میں بھی مدد دینے والا جز ہے۔ ہفتے میں دو سے تین بار مچھلی کھانے کی کوشش کریں۔

تمباکو نوشی سے چھٹکارا

کینسر جیسے موذی مرض کے باوجود آپ تمباکو نوشی ترک کرنے کے لیے کوئی جواز ڈھونڈ رہے ہیں؟ اگر ہاں تو یہ عادت موٹاپے کا باعث بھی بنتی ہے، درحقیقت تمباکو نوشی پیٹ کے گرد چربی کے جمع ہونے کا باعث بنتی ہے جس کے نتیجے میں توند نکلنے لگتی ہے۔

پانی کو ترجیح

اگر میٹھے مشروبات کمر کو پھیلاتے ہیں تو ایک مشروب توند کو شرطیہ کم کرتا ہے اور وہ ہے پانی، یہ جسم کو ڈی ہائیڈریشن سے بچاتا ہے جس سے پیٹ نہیں پھولتا، جبکہ پانی کا زیادہ استعمال غذا کی اشتہا کو بھی کم کرتا ہے اور پیٹ بھی جلد بھر جاتا ہے۔

میٹھے پکوانوں کو زیادہ کھانے سے گریز

تمام غذاﺅں میں چینی ایسی چیز ہے جو دیگر اقسام سے مختلف ہوتی ہے، یہ کھانے کی خواہش پر کنٹرول ختم کرتی ہے جس کے نتیجے میں جسم میں چربی بڑھتی ہے۔ ریفائن چینی اکثر جنک فوڈز میں موجود ہوتی ہے جو صحت کے لیے نقصان دہ ثابت ہوتے ہیں۔

پروٹین سے بھرپور غذا کا استعمال

ایسے کئی طبی شواہد سامنے آچکے ہیں کہ پروٹین پیٹ اور کمر کے ارگرد اکھٹی ہوجانے والی چربی کو گھلانے کی کنجی ہے، پروٹین ایک ہارمون پی وائی وائی کو ریلیز کرتا ہے جو دماغ کو پیٹ بھرنے کا پیغام بھیجتا ہے، یعنی پروٹین سے بھرپور غذا بسیار خوری سے روکتی ہے۔ مختلف طبی تحقیقی رپورٹس میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ زیادہ پروٹین والی غذائیں استعمال کرنے والے افراد میں توند کا امکان بہت کم ہوتا ہے، ایسی غذائیں میٹابولک ریٹ کو بڑھاتی ہے جبکہ ورزش سے مسلز بنانے میں بھی مدد ملتی ہے۔

جسمانی ورزشیں

جسمانی وزن میں کمی کے لیے ورزش کو معمول بنالینا ضروری ہے مگر بھاری وزن سے ورزش کرنا اس کا سب سے بہترین ذریعہ ہے، ویٹ لفٹنگ مسلز کے حجم کو بہتر بنانے اور برقرار رکھنے کے لیے ضروری ہے جبکہ اس سے میٹابولزم کو بڑھانے میں مدد ملتی ہے جس کا مطلب ہے کہ جسم چربی کو زیادہ تیزی سے گھلاتا ہے۔

نیند پوری کرنا

نیند مجموعی صحت میں بہتری کے لیے بہت ضروری ہے، خصوصاً جب جسمانی وزن کو کنٹرول کرنا ہو، سولہ سال تک جاری رہنے والی ایک تحقیق میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ چھ گھنٹے سے کم نیند کے نتیجے میں پیٹ اور کمر کے گرد چربی جمع ہونے یا توند نکلنے کا خطرہ بہت زیادہ بڑھ جاتا ہے۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *